ثنا فخر نے شوکت خانم ہسپتال کی فنڈ ریزنگ کےلئے منعقدہ تقریب میں بطو رایمبیسڈرمہمان شرکت

لندن میں منعقدہ فنڈ ریزنگ تقریب میں اداکارہ کے ساتھ معروف اداکار جاوید شٰیخ اور شوکت خانم سے ڈاکٹر فیصل سلطان نے بھی شرکت کی

اس موقع پر اداکارہ نے شوکت خانم ہسپتال کےلئے پاکستانی کمیونٹی سے کینسر مریضوں کے بارے میں اور ان کی ہر ممکن مدد کےلئے اپیل کی اس موقع پر سینکڑوں افراد نے دل کھول کے کینسر مریضوں کےلئے امداد کی اداکارہ نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ان دنوں برطانیہ میں موجود ہوں یہاں اداکار جاوید شیخ اور میں نے بطور شوکت خانم ایمبسیڈر شرکت کی اور کینسر مریضوں کےلئے فنڈ ریزنگ کا حصہ بنی انہوں نے کہا کہ یہاں میں ایک بات کرنا چاہتی ہوں اجکل کرونا وائرس تمام دنیا میں موضی مرض بن چکا ہے سوشل میڈیا پر عجیب غریب پوسٹ دیکھنے کو مل رہی ہیں میں اپنی عوام سے یہی کہنا چاہتی ہوں کہ کرونا وائرس سے بچنے کےلئے احتیاط کی زیادہ ضرورت ہے میں لندن ائرپورٹ پر موجود تھی جہاں تمام لوگ خوف ہراس پھلانے کی بجائے عام روٹین میں اپنا سفر جاری رکھے ہوئے ہیں لیکن سوشل میڈیا پر حیران کن طو ر پر لوگوں ایسے ڈرایا جارہا ہے جیسے ہر دوسرا شخص کرونا وائرس کا شکا ہوچکا ہے ہمیں خوف ہراس پہھلانے کی بجائے اس موضی مرض سے ڈٹ کر مقابلہ کرنا چاہئے جیسی چینی عوام اور حکومت نے ملکر اس مرض پر کافی حد تک قابو پالیا ہے ایک سوال کے جواب میں اداکارہ ثنا فخر کا کہنا تھا کہ برطانیہ میں شوکت خانم ہسپتال فنڈ ریزنگ کےلئے آئی ہوں جبکہ چار دیگر تقریبات میں بھی حصہ لیا ہے جبکہ کچھ معروف برانڈ اور ڈایزائنرز کےلئے منعقدہ فوٹو شوٹ میں بھی حصہ لے رہی ہوں جبکہ وطن واپسی کے بعد دیگر شوبز سرگرمیوں کا حصہ بنوگی۔

شیئرکریں