اپنے کام سے کام رکھتا ہوں کسی سے جیلس نہیں ہوتا – گلوکار علی نواز

اردو پنجابی گانوں کی مقبولیت کے بعد جلد سرائیکی گانا بھی مارکیٹ میں آرہا ہے
موسیقی کی باقاعدہ تربیت حاصل کی ہمیشہ لائیو پرفارمنس کی یہی کامیابی ہے

گانا بہت مشکل کام ہے اور سیکھے بنا جو اس فیلڈ میں آتے وہ زیادہ عرصہ فیلڈ میں نہیں رہتے کیونکہ جدید ٹیکنیک سے گانا ریکارڈ تو کرواسکتے باقاعدہ گلوکار نہیں بن سکتے ان خیالات کا اظہار گلوکار علی نواز نے ایک ملاقات میں کیا ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ شوز میں ہمیشہ لائیو گائیکی کو ترجیح دیتا ہوں اپنے کافی گیت ریکارڈ کرواچکا مگر شوز میں راحت فتح علی نصرت فتح علی خان مرحوم اور ہمسائیہ ملک کے فنکاروں کے گانوں کی فرمائش زیادہ ہوتی ہے علی نواز نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ سینیرز کو سن کے بھی بہت کچھ سیکھا کیونکہ وہ ہمارے لئیے اکیڈمی کا درجہ رکھتے علی نواز نے کہا مسرت یاسمین کی لکھے کو ریکارڈ کروایا تھا جو بہت پسند کیا گیا اب ایک سرائیکی گانا ریکارڈ کروایا جس کی شاعری اور موسیقی بہت اعلی ہے امید ھے کہ میرے پرستآر میرا سرائیکی گانا بھی پسند کریں گے آڈیو مکمل ہوچکا جلد ویڈیو کے ساتھ ریلیز کروں گا

شیئرکریں