فلم ’’جنون عشق ‘‘فلم انڈسٹری میں ٹرینڈ سیٹر ثابت ہو گی، سید نسیم حیدر شاہ

فلم کی میوزک لانچنگ میں فلم انڈسٹری کے نمایاں افراد کی شرکت،فلم کی کامیابی کے لیئے دعائیں، کافی عرصہ بعد ایک ساتھ سینیئرز کا ہجوم

رپورٹ، و تصاویر، انجم شہزاد

پاکستان میں اس وقت اردو فلموں کے ساتھ ساتھ پنجابی فلمیں بھی بنائی جا رہی ہیں اور فلم بین ان کو پسند بھی کرتے ہیں، ہمسائیہ ملک میں بھی اردو کے ساتھ دیگر زبانوں میں بھی فلمیں بنائی جاتی ہیں، اور وہ کامیاب بھی ہوتی ہیں،پاکستان میں بھی اردو کے ساتھ پنجابی، پشتو، کے ساتھ ساتھ سرائیکی زبان کی فلمیں بھی بنائی گئی ،لیکن زیادہ کامیابی اردو اور پنجابی فلموں کے حصے میں ہی آئی، اس وقت جہاں کراچی میں فلمیں بنائی جا رہی ہیں وہیں پاکستانی فلم انڈسٹری خاص کر لاہور کی انڈسٹری کی رونقیں دوبالا کرنے کے لیئے سینئرز کے ساتھ نئے پروڈیوسر ڈائریکٹرز بھی فلمیں بنا رہے ہیں، وہیں سیئنرز بھی فلم انڈسٹری کی بحالی کے لیئے اپنا حصہ ڈالنے میں مصروف ہیں تا کہ فلم انڈسٹری کی رونقیں بحال ہوں، اور روٹھے ہوئے فلم بین طبقے کو واپس لایا جائے، اس کے لیئے جہاں نئے موضوعات کی ضرورت ہے وہاں جدید ٹیکنالوجی کا استعمال بھی ضروری ہے، کیونکہ دنیا گلوبل ویلج بن چکی ہے، گزشتہ دنوں لاہور میں ایک فلم’’جنون عشق ‘‘کی کی میوزک لانچنگ تقریب منعقد کی گئی، یہ فلم 12اپریل سے ملک بھر کے سینماؤں میں ریلیز کی جا رہی ہے، تقریب میں فلم، ٹی وی، کے نامور فنکاروں کے ساتھ ساتھ ڈائریکٹرز، رائٹرز نے بھرپور شرکت کی ،فلم کی تقریب،مقامی فایؤ سٹار ہوٹل میں منعقد ہوئی جس میں منعقد ہوئی، جس میں انڈسٹری کے جن نمایاں افراد نے شرکت کی ان میں ، چوہدری اعجاز کامران، عرفان کھوسٹ ، پرویز کلیم،الطاف حسین، فلمسٹار شاہد،ظفر عباس کھچی،مہرین حسن پونم ناز، فلم کی کاسٹ میں عدنان خان، عامر قریشی، ماہی خان، نامور مصنف ناصر ادیب، سید نور، راشد محمود، فلم کے نڈائریکٹر سید نسیم حیدر شاہ، پروڈیوسر اصغر علی، اور دیگر شامل تھے، فلم کے رائٹر انعام واجد زبیری ہیں، اس موقع پر خصوصی گفتگو کرتے ہوئے فلم کے ڈائریکٹر سید نسیم حیدر شاہ نے فلم’’جنون عشق ‘‘کے حوالے سے کہا کہ یہ منفرد موضوع پر فلم ہوگی، جس میں پیار محبت، رومانس، کے ساتھ کامیڈی، کا عنصر بھی موجود ہوگا، عام روائیتی جگت بازی کی جگہ سچوائشنل کامیڈی دیکھنے کو ملے گی، اس کی شوٹنگز پاکستان کے حسین مقامات پر کی گئی ہے، جبکہ لیبارٹری ورک بنکاک کے مشہور لیب سے کروایا گیا ہے، تمام کاسٹ نے اپنے اپنے کرداروں کے ساتھ انصاف کیا ہے، فلم کے پروڈیوسر نے ہمیں ہر ممکن سہولیات مہیا کی ہیں، پروڈیوسر اصغر علی نے کہا کہ میوزک پر بھی توجہ دی گئی اور ہمیں پوری امید ہے کہ یہ فلم انڈسٹری کی رونقیں بحال کر دے گی،اس موقع پر کمپیئرنگ کے فرائض نامور ہوسٹ اسلم سیماب نے سر انجام دیئے، تلاوت نعت کے بعد مہمانوں کو سٹیج کی زینت بنایا گیا، جن میں فلمسٹار شاہد، سید نسیم حیدر شاہ، سید نور، ناصر ادیب ، الطاف حسین، چوہدری اعجاز کامران،فلم کی ہیروئین ماہی خان، ہیرو عدنان خان، اور ولن عامر قریشی جو کہ مصطفی قریشی کے بیٹے ہیں اور کافی عرصہ بعد لاہور کی فلم میں کا م کر رہے ہیں، تقریب میں فلم کا پرومو اور گانے دیکھائے گئے جسے سب حاضرین نے پسند کیا، اور ہال بار بار تالیوں سے گونجتا رہا، اس موقع پر مختصر خطاب کرتے ہوئے ناصر ادیب نے کہا کہ واجد زبیری نے اچھی کہانی لکھی امید ہے فلم بین بھی پسند کریں گے، سید نور نے بھی نسیم حیدر کے کام کی تعریف کی اور کامیابی کی دعا دی، الطاف حسین جو خود بہت سی سپر ہٹ فلموں کے ڈائریکٹر ہیں انہوں نے کہا کہ ا س فلم کی کامیابی سے لاہور کی انڈسٹری دوبارہ عروج کی جانب گامزن ہوگی، عرفان کھوسٹ نے بھی کہا کہ فلم دیکھنے میں اچھی ہے، پرویز کلیم نے کہا کہ محنت نظر تو آرہی کامیابی کا فیصلہ عوام کرے گی، ظفر عباس کھچی نے کہا کہ ہمیں ملکی فلموں کو دیکھنا چاہیئے پرموٹ کرنا چاہیئے ، پاکستانی ہونے کا ثبوت دینا چاہیئے، فلمسٹار شاہد نے کہا کہ سید نسیم حیدر شاہ منجھے ہوئے ڈائریکٹر ہیں، میں نے فلم میں کام کیا ان کے کام کا انداز اچھا لگا امید ہے کہ فلم نمایاں کامیابی حاصل کرے گی، فلم کے ولن عامر قریشی نے کہا کہ مجھے فخر ہے کہ آج اتنے بڑے لوگوں کے ساتھ بیٹھا ہوں، اور اس انڈسڑی میں کام کیا جہاں میرے والد صاحب کام کرتے رہے اورمیں ایک بات کہنا چاہوں گا کہ فلم انڈسٹری لاہور کی ہے کیونکہ کراچی والے تو ڈرامے کو فلم کا نام دے کے دکھا رہے، فلم کااپنا موڈ مزاج ہوتا ہے وہ لاہور کے ڈائریکٹرز سے بہتر کوئی نہیں جانتا، فلم کے ہیرو وعدنان خان نے کہا کہ’’ محبتاں سچیاں ‘‘کے بعد اس فلم سے بہت امیدیں وابستہ ہیں، فلم کی ہیروئین ماہی خان نے کہا کہ سینئرز کے ساتھ بیٹھ کے میری زبان اور ٹانگیں لڑکھڑا رہی ہیں، کچھ کہہ نہیں سکتی آپ سب کا شکریہ جو ہماری خوشیوں میں شریک ہوئے امید ہے کہ فلم بین ہماری فلم دیکھنے آئیں گے، تقریب میں مہمانوں کو پھولوں کے گلدستے پیش کیئے گئے، اور آخر میں مہمانوں کی کھانے سے تواضع کی گئی، سب حاضرین نے فلم کو پسند کیا، اور کامیابی کے لیئے دعا کی کہ اللہ کرے یہ فلم انڈسٹری میں تازہ ہوا کا جھونکا ثابت ہو

شیئرکریں