پلاک کے زیر اہتمام شاعر ڈاکٹر ناصر بلوچ کے ساتھ شام کااحوال

پلاک کے زیر اہتمام شاعر ڈاکٹر ناصر بلوچ کے ساتھ شام کااحوال

رپورٹ، انجم شہزاد

پنجاب انسٹیٹیوٹ آف لینگوئج، آرٹ اینڈ کلچر (پِلاک) کے زیر اہتمام معروف دانشور، ادیب اور شاعر ڈاکٹر ناصر بلوچ کے ساتھ ایک شام کا اہتمام کیا گیا جس کی صدارت نامور محقق مشتاق صوفی نے کی۔ تقریب میں دانشوروں، ادیبوں، شاعروں اور فنکاروں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ اظہار خیال کرنے والوں میں مشتاق صوفی، مختار عزمی، حسین مجروح، جاوید انور، راجہ صادق اللہ، ڈاکٹر نبیلہ رحمان، حفیظ طاہر، ڈاکٹر ایوب ندیم، اقبال قیصر، اخلاق عاطف، ساجد گِل، مریم شیرازی، نصرت بتول اور ڈاکٹر صغرا صدف شامل تھے۔ مقررین نے اُن کی شخصیت اور فن پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر ناصر بلوچ ملنسار، درویش صفت، کشادہ دل اور سلیم الفطرت انسان ہیں۔ حال ہی میں انھیں ’’ڈھاہاں انٹرنیشنل پرائز‘‘ (کینیڈا) سے نوازا گیا۔ جو کہ اُن کی کہانیوں کی کتاب ’’جھوٹا سچا کوئی نا‘‘ پر دیا گیا۔ ان کی اسی کتاب پر انھیں پِلاک کی طرف سے ’’شفقت تنویر مرزا ایوارڈ‘‘ سے بھی نوازا تھا۔ ڈاکٹر ناصر بلوچ نے اپنی کہانیوں کی بدولت پنجابی ادب کو دنیا کے کسی بھی ادب کے مقابلے میں لا کھڑا کیا ہے۔ ان کی کہانیاں علامتی ہیں جو کہ معاشرے کے ناسعور پر نشتر کا کام کرتی ہیں اور قاری کے ضمیر کو بیدار کرتی ہیں۔ تقریب کے آغاز میں عادل پیزادہ نے تلاوت قرآن مجید کی سعادت حاصل کی جبکہ سجاد بری اور ندیم باہو نے عارفانہ کلام پیش کیا۔ اس تقریب میں نظامت کے فرائض خاقان حیدر غازی نے سر انجام دئیے۔ مداحوں کی طرف سے ڈاکٹر ناصر بلوچ کو پھولوں ک تحائف پیش کیے گئے۔

شیئرکریں

اپنا تبصرہ بھیجیں