سینئرز ہمارے لیئے اکیڈمی کا درجہ رکھتے ہیں ، ان سے بہت کچھ سیکھا، عفیفہ بٹ

ہمیشہ سینئرز کو سنا اور ان سے سیکھنے کی کوشش کی، مجھے میری توقعات سے بڑھ کر کامیابی ملی، اس پر اپنے اللہ پاک کا جتنا شکر ادا کروں کم ہے، ان خیالات کا اظہار ماڈل، و گلوکارہ عفیفہ بٹ نے ایک ملاقات میں کیا، پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ ابھی مجھے اس فیلڈ میں آئے ہوئے تھوڑا عرصہ ہوا ہے، مجھے نہیں یقین تھا کہ کامیابی یوں میرے قدم چومے گی، ماڈلنگ کرنے فیلڈ میں آئی اور گلوکارہ بن گئی، اس کا یہ مطلب نہیں کہ مجھے گلوکاری کا شوق نہیں تھا، بچپن سے مجھے گانے کا شوق تھا سکول کالج کے ایونٹس پر پرفارم بھی کرتی تھی، مگر فرینڈز نے کہا کہ تم ماڈل بن سکتی ٹرائی کرو، مگر میری قسمت کہ میری ملاقات ’’جوک در جوک‘‘ کی ٹیم سے ہوئی اور میں اب اس ٹیم کا حصہ ہوں، ابھی تک چند پروگرامز میں شرکت کی ، عوام نے پذیرائی دی، ساتھیوں نے اعتماد دیا ، میں شو کے پروڈیوسر اور طاہر سرور میر کی مشکور ہوں، عفیفہ بٹ نے کہا کہ گانا میری نس نس میں سمایا ہے، اور میں ہر طرح کا گانا گا لیتی ہوں، یہ سب سینئرز کو سننے کی وجہ سے ہے،
انجم شہزاد

شیئرکریں