اداکارہ، گلوکارہ میگھا،کا گلوکاری فیلڈ میں آتے ہی دھماکہ ’’بارڈر پار‘‘جانے کی تیاریوں میں،

گلوکاری کی فیلڈ میں آتے ہی ہمسائیہ ملک کے بھنگڑا سٹار وریندر سنگھ کے ساتھ گانا ریکارڈ کروا لیا،

گانے کا پوسٹر سوشل میڈیا پر وائرل،پرستاروں نے لائکس کے انبار لگا دیئے، ویڈیو کی ریلیز کا بے چینی سے انتظار
(رپورٹ، انجم شہزاد)

فلم ، ٹی وی سٹیج اداکارہ میگھا ، نے اپنے فن اداکاری سے شوبز کے تینوں شعبوں میں ایک منفرد مقام بنایا،اداکاری کی تو تب بھی کوئی ان کا ثانی نا تھا، اور جب سٹیج پر رقص کا آغاز کیا تو بہت سے سٹیپ ایسے تھے جو صرف میگھا کے حصے میں آئے، اور پھر اچانک ایک سرپرائز دیا یعنی وہ گلوکاری کی فیلڈ میں آگئی، آتو شائد کافی عرصہ پہلے سے تھیں، مگر انہوں نے میڈیا کے لیئے سرپرائز رکھا، کیونکہ وہ ایسے ہی فیلڈ میں نہیں آئیں بلکہ ، میوزک کے اسرار و رموز سیکھ کر فیلڈ میں آئیں، اور جب آئیں تو آتے ہی، میوزک انڈسٹری میں دھماکہ کیا، یعنی میوزک ریکارڈنگ کے لیئے ملک ک نامور گلوکار، موسیقار طارق طافو کے ساتھ کام کا آغاز کیا،اور اب تک چار گانے ریکارڈ کر چکی ہیں، جن میں ایک خاص گانا ’’بارڈر پار‘‘ ہے جو ہمسائیہ ملک کے گلوکار وریندر سنگھ کے ساتھ ریکارڈ کیا، جس کا سولو ورژن بھی ریکارڈ کیا گیا ہے کیونکہ انٹر نیشنل شوز میں وریندر سنگھ کے ساتھ اور سولو بھی گایا جا سکتا ہے، گزشتہ دنوں میگھا سے اس حوالے سے تفصیلی گپ شپ ہوئی جس میں انہوں نے بتایا کہ میں نے باقاعدہ میوزک سیکھا ، کافی عرصہ سے میوزک کی تعلیم جاری تھی اور میں اب بھی ریاض کرتی ہوں ، موسیقی میں میرے استاد، سید ظہیر رضوی، اور الہی بخش سے تعلیم حاصل کرتی ہوں ، میں ان کی بہت شکر گزار ہوں کہ آج ان کی محنتوں سے میں اس مقام تک پہنچی ہوں، ایک سوال کے جواب میں کہا کہ میں نے جو چار گانے ریکارڈ کیئے ان میں صوفی سونگ، کلاسیکل سونگ ، اور بھنگڑا سونگ شامل ہیں، ان سب گیتوں کی موسیقی طارق طافو نے ترتیب دی ہے،جبکہ شاعروں میں سخی اعوان، علی کاشمیری اور طارق طافو شامل ہیں، میگھا کا کہنا ہے کہ استاد طافو اور طارق طافو کا نام کسی تعارف کا محتاج نہیں،موسیقی کے حوالے سے وہ یونیورسٹی کا درجہ رکھتے ہیں،میں خود کو خوش قسمت سمجھتی ہوں کہ ان کے میوزک پر گا رہی ہوں، ان گانوں کی ریکارڈنگ ظہیر عباس کے سٹوڈیو میں کی گئی ہے، میں اپنے پرستاروں کی مشکور ہوں جنہوں نے مجھے موسیقی کی دنیا میں بھی خوش آمدید کیا، ایک سوال کے جواب میں میگھا نے کہا کہ ابھی چار گانوں کی ریکارڈنگ مکمل ہوئی ہے، جلد ہی ویڈیوز پر کام سٹارٹ کیا جائے گا، میگھا کا کہنا ہے کہ جس طرح میرے پرستاروں نے اداکاری میں مجھے پسند کیا،اسی طرح مجھے گلوکاری میں پسند کریں گے، میں بھی ان کی پسند کے مطابق گانے ریکارڈ کروائے ہیں، کیونکہ صوفی ازم بھی آج کل نوجوان نسل میں کافی پسند کیا جاتا ہے، اس لیئے میں نے صوفی سونگ بھی ریکارڈ کیا، جبکہ کلاسیکل گانا ہے تو بہت مشکل مگرجب استاد ساتھ ہوں تو مشکلیں آسان ہوجاتی ہیں، کلاسیکل سیکھے بنا گایا نہیں جا سکتا، میگھا نے کہا کہ میں خود پر کسی مخصوص سٹائل کی چھاپ نہیں لگوانا چاہتی، اس لیئے موسیقی کی تمام اصناف میں قسمت آزمائی کروں گی،ہمسائیہ ملک کے گلوکار وریندر سنگھ کے ساتھ پرفارم کرنے کے حوالے سے میگھا کا کہنا ہے کہ اس کا آئیڈیا بھی طارق طافو نے دیا ، بھنگڑا گائیکی کے حوالے سے وریندر سنگھ کا اپنا ایک نام اور مقام ہے، ان کے ساتھ ایک ڈیوٹ سونگ ہے،’’بارڈر پار‘‘جس کو میرے چاہنے والے ضرور پسند کریں گے،اس گانے کے ذریعے میں نے بتانے کی کوشش کی کہ فنکار سرحدوں کے محتاج نہیں ہوتے،فنکار امن کا سفیر ہوتا ہے، سونگ کا مقصد بھی یہی کہ امن اور دوستی کا پرچار کیا جائے، اسی سونگ کا میں نے سولو ورژن ’’دلدار جی دلدار جی‘‘بھی ریکارڈ کیا ہے کیونکہ وریندر سنگھ ہر جگہ تو ساتھ نہیں ہوں گے، اس گانے کی شاعری سخی اعوان کی ہے، سولو ورژن کو بھی پسند کیا جائے گا، آڈیو مکمل ہوچکی ہے، جلد ہی اس کی ویڈیوز بنا کر لانچنگ تقریب منعقد کروں گی، میگھا نے کہا کہ ویڈیو پر بھی خصوصی محنت کریں گے ، کیونکہ آجکل گانا سننے کے ساتھ دیکھنے کی چیز بن چکا ہے ، پاکستان اور انٹرنیشنل چینلز پر میرے میوزک ویڈیوز ریلیز کیئے جایءں گے، ایک سوال کے جواب میں میگھا نے کہا کہ مجھ شوز کی بہت زیادہ آفر آرہی ہیں ، مگر میں جلد بازی نہیں کرنا چاہتی،میں مستقل مزاج ہوں اور مستقل مزاجی کی بدولت اپنا نام بنایا، میگھا نے کہا کہ میرا کسی سے کوئی مقابلہ نہیں میں اپنے سٹائل کی منفرد گلوکارہ ہوں گی ، جو میوزک کے تمام شعبوں میں ورائٹی دوں گی، میگھا نے کہا کہ فلمی موسیقی الگ شعبہ ہے، اس میں جانے کا ابھی فیصلہ نہیں کیا، آخر میں میگھا نے کہا کہ جلد پرستار میرے ویڈیوز دیکھیں گے،

شیئرکریں
  • 62
    Shares